بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

رَبُّ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ وَمَا بَيْنَهُمَا وَرَبُّ الْمَشَارِقِ ﴿5﴾ إِنَّا زَيَّنَّا السَّمَاءَ الدُّنْيَا بِزِينَةٍ الْكَوَاكِبِ ﴿6﴾ وَحِفْظًا مِنْ كُلِّ شَيْطَانٍ مَارِدٍ ﴿7﴾ لَا يَسَّمَّعُونَ إِلَى الْمَلَإِ الْأَعْلَىٰ وَيُقْذَفُونَ مِنْ كُلِّ جَانِبٍ ﴿8﴾ دُحُورًا ۖ وَلَهُمْ عَذَابٌ وَاصِبٌ ﴿9﴾ إِلَّا مَنْ خَطِفَ الْخَطْفَةَ فَأَتْبَعَهُ شِهَابٌ ثَاقِبٌ ﴿10﴾ فَاسْتَفْتِهِمْ أَهُمْ أَشَدُّ خَلْقًا أَمْ مَنْ خَلَقْنَا ۚ إِنَّا خَلَقْنَاهُمْ مِنْ طِينٍ لَازِبٍ ﴿11﴾ بَلْ عَجِبْتَ وَيَسْخَرُونَ ﴿12﴾ وَإِذَا ذُكِّرُوا لَا يَذْكُرُونَ ﴿13﴾ وَإِذَا رَأَوْا آيَةً يَسْتَسْخِرُونَ ﴿14﴾ وَقَالُوا إِنْ هَٰذَا إِلَّا سِحْرٌ مُبِينٌ ﴿15﴾ أَإِذَا مِتْنَا وَكُنَّا تُرَابًا وَعِظَامًا أَإِنَّا لَمَبْعُوثُونَ ﴿16﴾ أَوَآبَاؤُنَا الْأَوَّلُونَ ﴿17﴾ فَالتَّالِيَاتِ ذِكْرًا ﴿3﴾ إِنَّ إِلَٰهَكُمْ لَوَاحِدٌ ﴿4﴾ وَالصَّافَّاتِ صَفًّا ﴿1﴾ فَالزَّاجِرَاتِ زَجْرًا ﴿2﴾ قُلْ نَعَمْ وَأَنْتُمْ دَاخِرُونَ ﴿18﴾ فَإِنَّمَا هِيَ زَجْرَةٌ وَاحِدَةٌ فَإِذَا هُمْ يَنْظُرُونَ ﴿19﴾ وَقَالُوا يَا وَيْلَنَا هَٰذَا يَوْمُ الدِّينِ ﴿20﴾ هَٰذَا يَوْمُ الْفَصْلِ الَّذِي كُنْتُمْ بِهِ تُكَذِّبُونَ ﴿21﴾ احْشُرُوا الَّذِينَ ظَلَمُوا وَأَزْوَاجَهُمْ وَمَا كَانُوا يَعْبُدُونَ ﴿22﴾ مِنْ دُونِ اللَّهِ فَاهْدُوهُمْ إِلَىٰ صِرَاطِ الْجَحِيمِ ﴿23﴾ وَقِفُوهُمْ ۖ إِنَّهُمْ مَسْئُولُونَ ﴿24﴾ مَا لَكُمْ لَا تَنَاصَرُونَ ﴿25﴾ بَلْ هُمُ الْيَوْمَ مُسْتَسْلِمُونَ ﴿26﴾ وَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَىٰ بَعْضٍ يَتَسَاءَلُونَ ﴿27﴾ قَالُوا إِنَّكُمْ كُنْتُمْ تَأْتُونَنَا عَنِ الْيَمِينِ ﴿28﴾ قَالُوا بَلْ لَمْ تَكُونُوا مُؤْمِنِينَ ﴿29﴾ وَمَا كَانَ لَنَا عَلَيْكُمْ مِنْ سُلْطَانٍ ۖ بَلْ كُنْتُمْ قَوْمًا طَاغِينَ ﴿30﴾ فَحَقَّ عَلَيْنَا قَوْلُ رَبِّنَا ۖ إِنَّا لَذَائِقُونَ ﴿31﴾ فَأَغْوَيْنَاكُمْ إِنَّا كُنَّا غَاوِينَ ﴿32﴾ فَإِنَّهُمْ يَوْمَئِذٍ فِي الْعَذَابِ مُشْتَرِكُونَ ﴿33﴾ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَفْعَلُ بِالْمُجْرِمِينَ ﴿34﴾ إِنَّهُمْ كَانُوا إِذَا قِيلَ لَهُمْ لَا إِلَٰهَ إِلَّا اللَّهُ يَسْتَكْبِرُونَ ﴿35﴾ وَيَقُولُونَ أَئِنَّا لَتَارِكُو آلِهَتِنَا لِشَاعِرٍ مَجْنُونٍ ﴿36﴾ بَلْ جَاءَ بِالْحَقِّ وَصَدَّقَ الْمُرْسَلِينَ ﴿37﴾ إِنَّكُمْ لَذَائِقُو الْعَذَابِ الْأَلِيمِ ﴿38﴾ وَمَا تُجْزَوْنَ إِلَّا مَا كُنْتُمْ تَعْمَلُونَ ﴿39﴾ إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ ﴿40﴾ أُولَٰئِكَ لَهُمْ رِزْقٌ مَعْلُومٌ ﴿41﴾ فَوَاكِهُ ۖ وَهُمْ مُكْرَمُونَ ﴿42﴾ فِي جَنَّاتِ النَّعِيمِ ﴿43﴾ عَلَىٰ سُرُرٍ مُتَقَابِلِينَ ﴿44﴾ يُطَافُ عَلَيْهِمْ بِكَأْسٍ مِنْ مَعِينٍ ﴿45﴾ بَيْضَاءَ لَذَّةٍ لِلشَّارِبِينَ ﴿46﴾ لَا فِيهَا غَوْلٌ وَلَا هُمْ عَنْهَا يُنْزَفُونَ ﴿47﴾ وَعِنْدَهُمْ قَاصِرَاتُ الطَّرْفِ عِينٌ ﴿48﴾ كَأَنَّهُنَّ بَيْضٌ مَكْنُونٌ ﴿49﴾ فَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَىٰ بَعْضٍ يَتَسَاءَلُونَ ﴿50﴾ قَالَ قَائِلٌ مِنْهُمْ إِنِّي كَانَ لِي قَرِينٌ ﴿51﴾ يَقُولُ أَإِنَّكَ لَمِنَ الْمُصَدِّقِينَ ﴿52﴾ أَإِذَا مِتْنَا وَكُنَّا تُرَابًا وَعِظَامًا أَإِنَّا لَمَدِينُونَ ﴿53﴾ قَالَ هَلْ أَنْتُمْ مُطَّلِعُونَ ﴿54﴾ فَاطَّلَعَ فَرَآهُ فِي سَوَاءِ الْجَحِيمِ ﴿55﴾ قَالَ تَاللَّهِ إِنْ كِدْتَ لَتُرْدِينِ ﴿56﴾ وَلَوْلَا نِعْمَةُ رَبِّي لَكُنْتُ مِنَ الْمُحْضَرِينَ ﴿57﴾ أَفَمَا نَحْنُ بِمَيِّتِينَ ﴿58﴾ إِلَّا مَوْتَتَنَا الْأُولَىٰ وَمَا نَحْنُ بِمُعَذَّبِينَ ﴿59﴾ إِنَّ هَٰذَا لَهُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ ﴿60﴾ لِمِثْلِ هَٰذَا فَلْيَعْمَلِ الْعَامِلُونَ ﴿61﴾ أَذَٰلِكَ خَيْرٌ نُزُلًا أَمْ شَجَرَةُ الزَّقُّومِ ﴿62﴾ إِنَّا جَعَلْنَاهَا فِتْنَةً لِلظَّالِمِينَ ﴿63﴾ إِنَّهَا شَجَرَةٌ تَخْرُجُ فِي أَصْلِ الْجَحِيمِ ﴿64﴾ طَلْعُهَا كَأَنَّهُ رُءُوسُ الشَّيَاطِينِ ﴿65﴾ فَإِنَّهُمْ لَآكِلُونَ مِنْهَا فَمَالِئُونَ مِنْهَا الْبُطُونَ ﴿66﴾ ثُمَّ إِنَّ لَهُمْ عَلَيْهَا لَشَوْبًا مِنْ حَمِيمٍ ﴿67﴾ ثُمَّ إِنَّ مَرْجِعَهُمْ لَإِلَى الْجَحِيمِ ﴿68﴾ إِنَّهُمْ أَلْفَوْا آبَاءَهُمْ ضَالِّينَ ﴿69﴾ فَهُمْ عَلَىٰ آثَارِهِمْ يُهْرَعُونَ ﴿70﴾ وَلَقَدْ ضَلَّ قَبْلَهُمْ أَكْثَرُ الْأَوَّلِينَ ﴿71﴾ وَلَقَدْ أَرْسَلْنَا فِيهِمْ مُنْذِرِينَ ﴿72﴾ فَانْظُرْ كَيْفَ كَانَ عَاقِبَةُ الْمُنْذَرِينَ ﴿73﴾ إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ ﴿74﴾ وَلَقَدْ نَادَانَا نُوحٌ فَلَنِعْمَ الْمُجِيبُونَ ﴿75﴾ وَنَجَّيْنَاهُ وَأَهْلَهُ مِنَ الْكَرْبِ الْعَظِيمِ ﴿76﴾ وَجَعَلْنَا ذُرِّيَّتَهُ هُمُ الْبَاقِينَ ﴿77﴾ وَتَرَكْنَا عَلَيْهِ فِي الْآخِرِينَ ﴿78﴾ سَلَامٌ عَلَىٰ نُوحٍ فِي الْعَالَمِينَ ﴿79﴾ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿80﴾ إِنَّهُ مِنْ عِبَادِنَا الْمُؤْمِنِينَ ﴿81﴾ ثُمَّ أَغْرَقْنَا الْآخَرِينَ ﴿82﴾ وَإِنَّ مِنْ شِيعَتِهِ لَإِبْرَاهِيمَ ﴿83﴾ إِذْ جَاءَ رَبَّهُ بِقَلْبٍ سَلِيمٍ ﴿84﴾ إِذْ قَالَ لِأَبِيهِ وَقَوْمِهِ مَاذَا تَعْبُدُونَ ﴿85﴾ أَئِفْكًا آلِهَةً دُونَ اللَّهِ تُرِيدُونَ ﴿86﴾ فَمَا ظَنُّكُمْ بِرَبِّ الْعَالَمِينَ ﴿87﴾ فَنَظَرَ نَظْرَةً فِي النُّجُومِ ﴿88﴾ فَقَالَ إِنِّي سَقِيمٌ ﴿89﴾ فَتَوَلَّوْا عَنْهُ مُدْبِرِينَ ﴿90﴾ فَرَاغَ إِلَىٰ آلِهَتِهِمْ فَقَالَ أَلَا تَأْكُلُونَ ﴿91﴾ مَا لَكُمْ لَا تَنْطِقُونَ ﴿92﴾ فَرَاغَ عَلَيْهِمْ ضَرْبًا بِالْيَمِينِ ﴿93﴾ فَأَقْبَلُوا إِلَيْهِ يَزِفُّونَ ﴿94﴾ قَالَ أَتَعْبُدُونَ مَا تَنْحِتُونَ ﴿95﴾ وَاللَّهُ خَلَقَكُمْ وَمَا تَعْمَلُونَ ﴿96﴾ قَالُوا ابْنُوا لَهُ بُنْيَانًا فَأَلْقُوهُ فِي الْجَحِيمِ ﴿97﴾ فَأَرَادُوا بِهِ كَيْدًا فَجَعَلْنَاهُمُ الْأَسْفَلِينَ ﴿98﴾ وَقَالَ إِنِّي ذَاهِبٌ إِلَىٰ رَبِّي سَيَهْدِينِ ﴿99﴾ رَبِّ هَبْ لِي مِنَ الصَّالِحِينَ ﴿100﴾ فَبَشَّرْنَاهُ بِغُلَامٍ حَلِيمٍ ﴿101﴾ فَلَمَّا بَلَغَ مَعَهُ السَّعْيَ قَالَ يَا بُنَيَّ إِنِّي أَرَىٰ فِي الْمَنَامِ أَنِّي أَذْبَحُكَ فَانْظُرْ مَاذَا تَرَىٰ ۚ قَالَ يَا أَبَتِ افْعَلْ مَا تُؤْمَرُ ۖ سَتَجِدُنِي إِنْ شَاءَ اللَّهُ مِنَ الصَّابِرِينَ ﴿102﴾ فَلَمَّا أَسْلَمَا وَتَلَّهُ لِلْجَبِينِ ﴿103﴾ وَنَادَيْنَاهُ أَنْ يَا إِبْرَاهِيمُ ﴿104﴾ قَدْ صَدَّقْتَ الرُّؤْيَا ۚ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿105﴾ إِنَّ هَٰذَا لَهُوَ الْبَلَاءُ الْمُبِينُ ﴿106﴾ وَفَدَيْنَاهُ بِذِبْحٍ عَظِيمٍ ﴿107﴾ وَتَرَكْنَا عَلَيْهِ فِي الْآخِرِينَ ﴿108﴾ سَلَامٌ عَلَىٰ إِبْرَاهِيمَ ﴿109﴾ كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿110﴾ إِنَّهُ مِنْ عِبَادِنَا الْمُؤْمِنِينَ ﴿111﴾ وَبَشَّرْنَاهُ بِإِسْحَاقَ نَبِيًّا مِنَ الصَّالِحِينَ ﴿112﴾ وَبَارَكْنَا عَلَيْهِ وَعَلَىٰ إِسْحَاقَ ۚ وَمِنْ ذُرِّيَّتِهِمَا مُحْسِنٌ وَظَالِمٌ لِنَفْسِهِ مُبِينٌ ﴿113﴾ وَلَقَدْ مَنَنَّا عَلَىٰ مُوسَىٰ وَهَارُونَ ﴿114﴾ وَنَجَّيْنَاهُمَا وَقَوْمَهُمَا مِنَ الْكَرْبِ الْعَظِيمِ ﴿115﴾ وَنَصَرْنَاهُمْ فَكَانُوا هُمُ الْغَالِبِينَ ﴿116﴾ وَآتَيْنَاهُمَا الْكِتَابَ الْمُسْتَبِينَ ﴿117﴾ وَهَدَيْنَاهُمَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِيمَ ﴿118﴾ وَتَرَكْنَا عَلَيْهِمَا فِي الْآخِرِينَ ﴿119﴾ سَلَامٌ عَلَىٰ مُوسَىٰ وَهَارُونَ ﴿120﴾ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿121﴾ إِنَّهُمَا مِنْ عِبَادِنَا الْمُؤْمِنِينَ ﴿122﴾ وَإِنَّ إِلْيَاسَ لَمِنَ الْمُرْسَلِينَ ﴿123﴾ إِذْ قَالَ لِقَوْمِهِ أَلَا تَتَّقُونَ ﴿124﴾ أَتَدْعُونَ بَعْلًا وَتَذَرُونَ أَحْسَنَ الْخَالِقِينَ ﴿125﴾ اللَّهَ رَبَّكُمْ وَرَبَّ آبَائِكُمُ الْأَوَّلِينَ ﴿126﴾ فَكَذَّبُوهُ فَإِنَّهُمْ لَمُحْضَرُونَ ﴿127﴾ إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ ﴿128﴾ وَتَرَكْنَا عَلَيْهِ فِي الْآخِرِينَ ﴿129﴾ سَلَامٌ عَلَىٰ إِلْ يَاسِينَ ﴿130﴾ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿131﴾ إِنَّهُ مِنْ عِبَادِنَا الْمُؤْمِنِينَ ﴿132﴾ وَإِنَّ لُوطًا لَمِنَ الْمُرْسَلِينَ ﴿133﴾ إِذْ نَجَّيْنَاهُ وَأَهْلَهُ أَجْمَعِينَ ﴿134﴾ إِلَّا عَجُوزًا فِي الْغَابِرِينَ ﴿135﴾ ثُمَّ دَمَّرْنَا الْآخَرِينَ ﴿136﴾ وَإِنَّكُمْ لَتَمُرُّونَ عَلَيْهِمْ مُصْبِحِينَ ﴿137﴾ وَبِاللَّيْلِ ۗ أَفَلَا تَعْقِلُونَ ﴿138﴾ وَإِنَّ يُونُسَ لَمِنَ الْمُرْسَلِينَ ﴿139﴾ إِذْ أَبَقَ إِلَى الْفُلْكِ الْمَشْحُونِ ﴿140﴾ فَسَاهَمَ فَكَانَ مِنَ الْمُدْحَضِينَ ﴿141﴾ فَالْتَقَمَهُ الْحُوتُ وَهُوَ مُلِيمٌ ﴿142﴾ فَلَوْلَا أَنَّهُ كَانَ مِنَ الْمُسَبِّحِينَ ﴿143﴾ لَلَبِثَ فِي بَطْنِهِ إِلَىٰ يَوْمِ يُبْعَثُونَ ﴿144﴾ فَنَبَذْنَاهُ بِالْعَرَاءِ وَهُوَ سَقِيمٌ ﴿145﴾ وَأَنْبَتْنَا عَلَيْهِ شَجَرَةً مِنْ يَقْطِينٍ ﴿146﴾ وَأَرْسَلْنَاهُ إِلَىٰ مِائَةِ أَلْفٍ أَوْ يَزِيدُونَ ﴿147﴾ فَآمَنُوا فَمَتَّعْنَاهُمْ إِلَىٰ حِينٍ ﴿148﴾ فَاسْتَفْتِهِمْ أَلِرَبِّكَ الْبَنَاتُ وَلَهُمُ الْبَنُونَ ﴿149﴾ أَمْ خَلَقْنَا الْمَلَائِكَةَ إِنَاثًا وَهُمْ شَاهِدُونَ ﴿150﴾ أَلَا إِنَّهُمْ مِنْ إِفْكِهِمْ لَيَقُولُونَ ﴿151﴾ وَلَدَ اللَّهُ وَإِنَّهُمْ لَكَاذِبُونَ ﴿152﴾ أَصْطَفَى الْبَنَاتِ عَلَى الْبَنِينَ ﴿153﴾ مَا لَكُمْ كَيْفَ تَحْكُمُونَ ﴿154﴾ أَفَلَا تَذَكَّرُونَ ﴿155﴾ أَمْ لَكُمْ سُلْطَانٌ مُبِينٌ ﴿156﴾ فَأْتُوا بِكِتَابِكُمْ إِنْ كُنْتُمْ صَادِقِينَ ﴿157﴾ وَجَعَلُوا بَيْنَهُ وَبَيْنَ الْجِنَّةِ نَسَبًا ۚ وَلَقَدْ عَلِمَتِ الْجِنَّةُ إِنَّهُمْ لَمُحْضَرُونَ ﴿158﴾ سُبْحَانَ اللَّهِ عَمَّا يَصِفُونَ ﴿159﴾ إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ ﴿160﴾ فَإِنَّكُمْ وَمَا تَعْبُدُونَ ﴿161﴾ مَا أَنْتُمْ عَلَيْهِ بِفَاتِنِينَ ﴿162﴾ إِلَّا مَنْ هُوَ صَالِ الْجَحِيمِ ﴿163﴾ وَمَا مِنَّا إِلَّا لَهُ مَقَامٌ مَعْلُومٌ ﴿164﴾ وَإِنَّا لَنَحْنُ الصَّافُّونَ ﴿165﴾ وَإِنَّا لَنَحْنُ الْمُسَبِّحُونَ ﴿166﴾ وَإِنْ كَانُوا لَيَقُولُونَ ﴿167﴾ لَوْ أَنَّ عِنْدَنَا ذِكْرًا مِنَ الْأَوَّلِينَ ﴿168﴾ لَكُنَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ ﴿169﴾ فَكَفَرُوا بِهِ ۖ فَسَوْفَ يَعْلَمُونَ ﴿170﴾ وَلَقَدْ سَبَقَتْ كَلِمَتُنَا لِعِبَادِنَا الْمُرْسَلِينَ ﴿171﴾ إِنَّهُمْ لَهُمُ الْمَنْصُورُونَ ﴿172﴾ وَإِنَّ جُنْدَنَا لَهُمُ الْغَالِبُونَ ﴿173﴾ فَتَوَلَّ عَنْهُمْ حَتَّىٰ حِينٍ ﴿174﴾ وَأَبْصِرْهُمْ فَسَوْفَ يُبْصِرُونَ ﴿175﴾ أَفَبِعَذَابِنَا يَسْتَعْجِلُونَ ﴿176﴾ فَإِذَا نَزَلَ بِسَاحَتِهِمْ فَسَاءَ صَبَاحُ الْمُنْذَرِينَ ﴿177﴾ وَتَوَلَّ عَنْهُمْ حَتَّىٰ حِينٍ ﴿178﴾ وَأَبْصِرْ فَسَوْفَ يُبْصِرُونَ ﴿179﴾ سُبْحَانَ رَبِّكَ رَبِّ الْعِزَّةِ عَمَّا يَصِفُونَ ﴿180﴾ وَسَلَامٌ عَلَى الْمُرْسَلِينَ ﴿181﴾ وَالْحَمْدُ لِلَّهِ رَبِّ الْعَالَمِينَ ﴿182﴾

عظیم اور دائمی رحمتوں والے خدا کے نام سے

وہ آسمان و زمین اور ان کے مابین کی تمام چیزوں کا پروردگار اور ہر مشرق کا مالک ہے ﴿5﴾ بیشک ہم نے آسمان دنیا کو ستاروں سے مزین بنا دیا ہے ﴿6﴾ اور انہیں ہر سرکش شیطان سے حفاظت کا ذریعہ بنا دیا ہے ﴿7﴾ کہ اب شیاطین عالم بالا کی باتیں سننے کی کوشش نہیں کر سکتے اور وہ ہر طرف سے مارے جائیں گے ﴿8﴾ ہنکانے کے لئے اور ان کے لئے ہمیشہ ہمیشہ کا عذاب ہے ﴿9﴾ علاوہ اس کے جو کوئی بات اچک لے تو اس کے پیچھے آگ کا شعلہ لگ جاتا ہے ﴿10﴾ اب ذرا ان سے دریافت کرو کہ یہ زیادہ دشوار گزار مخلوق ہیں یا جن کو ہم پیدا کر چکے ہیں ہم نے ان سب کو ایک لس دار مٹی سے پیدا کیا ہے ﴿11﴾ بلکہ تم تعجب کرتے ہو اور یہ مذاق اڑاتے ہیں ﴿12﴾ اور جب نصیحت کی جاتی ہے تو قبول نہیں کرتے ہیں ﴿13﴾ اور جب کوئی نشانی دیکھ لیتے ہیں تو مسخرا پن کرتے ہیں ﴿14﴾ اور کہتے ہیں کہ یہ تو ایک کھلا ہوا جادو ہے ﴿15﴾ کیا جب ہم مر جائیں گے اور مٹی اور ہڈی ہو جائیں گے تو کیا دوبارہ اٹھائیں جائیں گے ﴿16﴾ اور کیا ہمارے اگلے باپ دادا بھی زندہ کئے جائیں گے ﴿17﴾ پھر ذکر خدا کی تلاوت کرنے والوں کی قسم ﴿3﴾ بیشک تمہارا خدا ایک ہے ﴿4﴾ باقاعدہ طور پر صفیں باندھنے والوں کی قسم ﴿1﴾ پھر مکمل طریقہ سے تنبیہ کرنے والوں کی قسم ﴿2﴾ کہہ دیجئے کہ بیشک اور تم ذلیل بھی ہو گے ﴿18﴾ یہ قیامت تو صرف ایک للکار ہو گی جس کے بعد سب دیکھنے لگیں گے ﴿19﴾ اور کہیں گے کہ ہائے افسوس یہ تو قیامت کا دن ہے ﴿20﴾ بیشک یہی وہ فیصلہ کا دن ہے جسے تم لوگ جھٹلایا کرتے تھے ﴿21﴾ فرشتو ذرا ان ظلم کرنے والوں کو اور ان کے ساتھیوں کو اور خدا کے علاوہ جن کی یہ عبادت کیا کرتے تھے سب کو اکٹھا تو کرو ﴿22﴾ اور ان کے تمام معبودوں کو اور ان کو جہنّم کا راستہ تو بتا دو ﴿23﴾ اور ذرا ان کو ٹھہراؤ کہ ابھی ان سے کچھ سوال کیا جائے گا ﴿24﴾ اب تمہیں کیا ہو گیا ہے کہ ایک دوسرے کی مدد کیوں نہیں کرتے ہو ﴿25﴾ بلکہ آج تو سب کے سب سر جھکائے ہوئے ہیں ﴿26﴾ اور ایک دوسرے کی طرف رخ کر کے سوال کر رہے ہیں ﴿27﴾ کہتے ہیں کہ تم ہی تو ہو جو ہماری داہنی طرف سے آیا کرتے تھے ﴿28﴾ وہ کہیں گے کہ نہیں تم خود ہی ایمان لانے والے نہیں تھے ﴿29﴾ اور ہماری تمہارے اوپر کوئی حکومت نہیں تھی بلکہ تم خود ہی سرکش قوم تھے ﴿30﴾ اب ہم سب پر خدا کا عذاب ثابت ہو گیا ہے اور سب کو اس کا مزہ چکھنا ہو گا ﴿31﴾ ہم نے تم کو گمراہ کیا کہ ہم خود ہی گمراہ تھے ﴿32﴾ تو آج کے دن سب ہی عذاب میں برابر کے شریک ہوں گے ﴿33﴾ اور ہم اسی طرح مجرمین کے ساتھ برتاؤ کیا کرتے ہیں ﴿34﴾ ان سے جب کہا جاتا تھا کہ اللہ کے علاوہ کوئی خدا نہیں ہے تو اکڑ جاتے تھے ﴿35﴾ اور کہتے تھے کہ کیا ہم ایک مجنون شاعر کی خاطر اپنے خداؤں کو چھوڑ دیں گے ﴿36﴾ حالانکہ وہ حق لے کر آیا تھا اور تمام رسولوں کی تصدیق کرنے والا تھا ﴿37﴾ بیشک تم سب دردناک عذاب کا مزہ چکھنے والے ہو ﴿38﴾ اور تمہیں تمہارے اعمال کے مطابق ہی بدلہ دیا جائے گا ﴿39﴾ علاوہ اللہ کے مخلص بندوں کے ﴿40﴾ کہ ان کے لئے معین رزق ہے ﴿41﴾ میوے ہیں اور وہ با عزت طریقہ سے رہیں گے ﴿42﴾ نعمتوں سے بھری ہوئی جنّت میں ﴿43﴾ آمنے سامنے تخت پر بیٹھے ہوئے ﴿44﴾ ان کے گرد صاف شفاف شراب کا دور چل رہا ہو گا ﴿45﴾ سفید رنگ کی شراب جس میں پینے والے کو لطف آئے ﴿46﴾ اس میں نہ کوئی درد سر ہو اور نہ ہوش و حواس گم ہونے پائیں ﴿47﴾ اور ان کے پاس محدود نظر رکھنے والی کشادہ چشم حوریں ہوں گی ﴿48﴾ جن کا رنگ و روغن ایسا ہو گا جیسے چھپائے ہوئے انڈے رکھے ہوئے ہوں ﴿49﴾ پھر ایک دوسرے کی طرف رخ کر کے سوال کریں گے ﴿50﴾ تو ان میں کا ایک کہے گا کہ دار دنیا میں ہمارا ایک ساتھی بھی تھا ﴿51﴾ وہ کہا کرتا تھا کہ کیا تم بھی قیامت کی تصدیق کرنے والوں میں ہو ﴿52﴾ کیا جب مر کر مٹی اور ہڈی ہو جائیں گے تو ہمیں ہمارے اعمال کا بدلہ دیا جائے گا ﴿53﴾ کیا تم لوگ بھی اسے دیکھو گے ﴿54﴾ یہ کہہ کہ نگاہ ڈالی تو اسے بیچ جہنّم میں دیکھا ﴿55﴾ کہا کہ خدا کی قسم قریب تھا کہ تو مجھے بھی ہلاک کر دیتا ﴿56﴾ اور میرے پروردگار کا احسان نہ ہوتا تو میں بھی یہیں حاضر کر دیا جاتا ﴿57﴾ کیا یہ صحیح نہیں ہے کہ ہم اب مرنے والے نہیں ہیں ﴿58﴾ سوائے پہلی موت کے اور ہم پر عذاب ہونے والا بھی نہیں ہے ﴿59﴾ یقیناً یہ بہت بڑی کامیابی ہے ﴿60﴾ اسی دن کے لئے عمل کرنے والوں کو عمل کرنا چاہئے ﴿61﴾ ذرا بتاؤ کہ یہ نعمتیں مہمانی کے واسطے بہتر ہیں یا تھوہڑ کا درخت ﴿62﴾ جسے ہم نے ظالمین کی آزمائش کے لئے قرار دیا ہے ﴿63﴾ یہ ایک درخت ہے جو جہنّم کی تہہ سے نکلتا ہے ﴿64﴾ اس کے پھل ایسے بدنما ہیں جیسے شیطانوں کے سر ﴿65﴾ مگر یہ جہنّمی اسی کو کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے ﴿66﴾ پھر ان کے پینے کے لئے گرما گرم پانی ہو گا جس میں پیپ وغیرہ کی آمیزش ہو گی ﴿67﴾ پھر ان سب کا آخری انجام جہنّم ہو گا ﴿68﴾ انہوں نے اپنے باپ دادا کو گمراہ پایا تھا ﴿69﴾ تو ان ہی کے نقش قدم پر بھاگتے چلے گئے ﴿70﴾ اور یقیناً ان سے پہلے بزرگوں کی ایک بڑی جماعت گمراہ ہو چکی ہے ﴿71﴾ اور ہم نے ان کے درمیان ڈرانے والے پیغمبر علیہ السّلام بھیجے ﴿72﴾ تو اب دیکھو کہ جنہیں ڈرایا جاتا ہے ان کے نہ ماننے کا انجام کیا ہوتا ہے ﴿73﴾ علاوہ ان لوگوں کے جو اللہ کے مخلص بندے ہوتے ہیں ﴿74﴾ اور یقیناً نوح علیہ السّلام نے ہم کو آواز دی تو ہم بہترین قبول کرنے والے ہیں ﴿75﴾ اور ہم نے انہیں اور ان کے اہل کو بہت بڑے کرب سے نجات دے دی ہے ﴿76﴾ اور ہم نے ان کی اولاد ہی کو باقی رہنے والوں میں قرار دیا ﴿77﴾ اور ان کے تذکرہ کو آنے والی نسلوں میں برقرار رکھا ﴿78﴾ ساری خدائی میں نوح علیہ السّلام پر ہمارا سلام ﴿79﴾ ہم اسی طرح نیک عمل کرنے والوں کو جزا دیتے ہیں ﴿80﴾ وہ ہمارے ایماندار بندوں میں سے تھے ﴿81﴾ پھر ہم نے باقی سب کو غرق کر دیا ﴿82﴾ اور یقیناً نوح علیہ السّلام ہی کے پیروکاروں میں سے ابراہیم علیہ السّلام بھی تھے ﴿83﴾ جب اللہ کی بارگاہ میں قلب سلیم کے ساتھ حاضر ہوئے ﴿84﴾ جب اپنے مربّی باپ اور اپنی قوم سے کہا کہ تم لوگ کس کی عبادت کر رہے ہو ﴿85﴾ کیا خدا کو چھوڑ کر ان خود ساختہ خداؤں کے طلب گار بن گئے ہو ﴿86﴾ تو پھر رب العالمین کے بارے میں تمہارا کیا خیال ہے ﴿87﴾ پھر ابراہیم علیہ السّلام نے ستاروں میں وقت نظر سے کام لیا ﴿88﴾ اور کہا کہ میں بیمار ہوں ﴿89﴾ تو وہ لوگ منہ پھیر کر چلے گئے ﴿90﴾ اور ابراہیم علیہ السّلام نے ان کے خداؤں کی طرف رخ کر کے کہا کہ تم لوگ کچھ کھاتے کیوں نہیں ہو ﴿91﴾ تمہیں کیا ہو گیا ہے کہ بولتے بھی نہیں ہو ﴿92﴾ پھر ان کی مرمت کی طرف متوجہ ہو گئے ﴿93﴾ تو وہ لوگ دوڑتے ہوئے ابراہیم علیہ السّلام کے پاس آئے ﴿94﴾ تو ابراہیم علیہ السّلام نے کہا کہ کیا تم لوگ اپنے ہاتھوں کے تراشیدہ بتوں کی پرستش کرتے ہو ﴿95﴾ جب کہ خدا نے تمہیں اور ان کو سبھی کو پیدا کیا ہے ﴿96﴾ ان لوگوں نے کہا کہ ایک عمارت بنا کر کر آگ جلا کر انہیں آگ میں ڈال دو ﴿97﴾ ان لوگوں نے ایک چال چلنا چاہی لیکن ہم نے انہیں پست اور ذلیل کر دیا ﴿98﴾ اور ابراہیم علیہ السّلام نے کہا کہ میں اپنے پروردگار کی طرف جا رہا ہوں کہ وہ میری ہدایت کر دے گا ﴿99﴾ پروردگار مجھے ایک صالح فرزند عطا فرما ﴿100﴾ پھر ہم نے انہیں ایک نیک دل فرزند کی بشارت دی ﴿101﴾ پھر جب وہ فرزند ان کے ساتھ دوڑ دھوپ کرنے کے قابل ہو گیا تو انہوں نے کہا کہ بیٹا میں خواب میں دیکھ رہا ہوں کہ میں تمہیں ذبح کر رہا ہوں اب تم بتاؤ کہ تمہارا کیا خیال ہے فرزند نے جواب دیا کہ بابا جو آپ کو حکم دیا جا رہا ہے اس پر عمل کریں انشاء اللہ آپ مجھے صبر کرنے والوں میں سے پائیں گے ﴿102﴾ پھر جب دونوں نے سر تسلیم خم کر دیا اور باپ نے بیٹے کو ماتھے کے بل لٹا دیا ﴿103﴾ اور ہم نے آواز دی کہ اے ابراہیم علیہ السّلام ﴿104﴾ تم نے اپنا خواب سچ کر دکھایا ہم اسی طرح حسن عمل والوں کو جزا دیتے ہیں ﴿105﴾ بیشک یہ بڑا کھلا ہوا امتحان ہے ﴿106﴾ اور ہم نے اس کا بدلہ ایک عظیم قربانی کو قرار دے دیا ہے ﴿107﴾ اور اس کا تذکرہ آخری دور تک باقی رکھا ہے ﴿108﴾ سلام ہو ابراہیم علیہ السّلام پر ﴿109﴾ ہم اسی طرح حَسن عمل والوں کو جزا دیا کرتے ہیں ﴿110﴾ بیشک ابراہیم علیہ السّلام ہمارے مومن بندوں میں سے تھے ﴿111﴾ اور ہم نے انہیں اسحاق علیہ السّلام کی بشارت دی جو نبی اور نیک بندوں میں سے تھے ﴿112﴾ اور ہم نے ان پر اور اسحاق علیہ السّلام پر برکت نازل کی اور ان کی اولاد میں بعض نیک کردار اور بعض کھلم کھُلا اپنے نفس پر ظلم کرنے والے ہیں ﴿113﴾ اور ہم نے موسیٰ علیہ السّلام اور ہارون علیہ السّلام پر بھی احسان کیا ہے ﴿114﴾ اور انہیں اور ان کی قوم کو عظیم کرب سے نجات دلائی ہے ﴿115﴾ اور ان کی مدد کی ہے تو وہ غلبہ حاصل کرنے والوں میں ہو گئے ہیں ﴿116﴾ اور ہم نے انہیں واضح مطالب والی کتاب عطا کی ہے ﴿117﴾ اور دونوں کو سیدھے راستہ کی ہدایت بھی دی ہے ﴿118﴾ اور ان کا تذکرہ بھی اگلی نسلوں میں باقی رکھا ہے ﴿119﴾ سلام ہو موسیٰ علیہ السّلام اور ہارون علیہ السّلام پر ﴿120﴾ ہم اسی طرح نیک عمل کرنے والوں کو بدلہ دیا کرتے ہیں ﴿121﴾ بیشک وہ دونوں ہمارے مومن بندوں میں سے تھے ﴿122﴾ اور یقیناً الیاس علیہ السّلام بھی مرسلین میں سے تھے ﴿123﴾ جب انہوں نے اپنی قوم سے کہا کہ تم لوگ خدا سے کیوں نہیں ڈرتے ہو ﴿124﴾ کیا تم لوگ بعل کو آواز دیتے ہو اور بہترین خلق کرنے والے کو چھوڑ دیتے ہو ﴿125﴾ جب کہ وہ اللہ تمہارے اور تمہارے باپ داد کا پالنے والا ہے ﴿126﴾ پھر ان لوگوں نے رسول کی تکذیب کی تو سب کے سب جہنمّ میں گرفتار کئے جائیں گے ﴿127﴾ علاوہ اللہ کے مخلص بندوں کے ﴿128﴾ اور ہم نے ان کا تذکرہ بھی بعد کی نسلوں میں باقی رکھ دیا ہے ﴿129﴾ سلام ہو آل یاسین علیہ السّلام پر ﴿130﴾ ہم اسی طرح حق عمل والوں کو جزا دیا کرتے ہیں ﴿131﴾ بیشک وہ ہمارے با ایمان بندوں میں سے تھے ﴿132﴾ اور لوط بھی یقیناً مرسلین میں تھے ﴿133﴾ تو ہم نے انہیں اور ان کے تمام گھر والوں کو نجات دے دی ﴿134﴾ علاوہ ان کی زوجہ کے کہ وہ پیچھے رہ جانے والوں میں شامل ہو گئی تھی ﴿135﴾ پھر ہم نے سب کو تباہ و برباد بھی کر دیا ﴿136﴾ تم ان کی طرف سے برابر صبح کو گزرتے رہتے ہو ﴿137﴾ اور رات کے وقت بھی تو کیا تمہیں عقل نہیں آ رہی ہے ﴿138﴾ اور بیشک یونس علیہ السّلام بھی مرسلین میں سے تھے ﴿139﴾ جب وہ بھاگ کر ایک بھری ہوئی کشتی کی طرف گئے ﴿140﴾ اور اہل کشتی نے قرعہ نکالا تو انہیں شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا ﴿141﴾ پھر انہیں مچھلی نے نگل لیا جب کہ وہ خود اپنے نفس کی ملامت کر رہے تھے ﴿142﴾ پھر اگر وہ تسبیح کرنے والوں میں سے نہ ہوتے ﴿143﴾ تو روزِ قیامت تک اسی کے شکم میں رہ جاتے ﴿144﴾ پھر ہم نے ان کو ایک میدان میں ڈال دیا جب کہ وہ مریض بھی ہو گئے تھے ﴿145﴾ اور ان پر ایک کدو کا درخت اُگا دیا ﴿146﴾ اور انہیں ایک لاکھ یا اس سے زیادہ کی قوم کی طرف نمائندہ بنا کر بھیجا ﴿147﴾ تو وہ لوگ ایمان لے آئے اور ہم نے بھی ایک مدّت تک انہیں آرام بھی دیا ﴿148﴾ پھر اے پیغمبر ان کفار سے پوچھئے کہ کیا تمہارے پروردگار کے پاس لڑکیاں ہیں اور تمہارے پاس لڑکے ہیں ﴿149﴾ یا ہم نے ملائکہ کو لڑکیوں کی شکل میں پیدا کیا ہے اور یہ اس کے گواہ ہیں ﴿150﴾ آگاہ ہو جاؤ کہ یہ لوگ اپنی من گھڑت کے طور پر یہ باتیں بناتے ہیں ﴿151﴾ کہ اللہ کے یہاں فرزند پیدا ہوا ہے اور یہ لوگ بالکل جھوٹے ہیں ﴿152﴾ کیا اس نے اپنے لئے بیٹوں کے بجائے بیٹیوں کا انتخاب کیا ہے ﴿153﴾ آخر تمہیں کیا ہو گیا ہے تم کیسا فیصلہ کر رہے ہو ﴿154﴾ کیا تم غور و فکر نہیں کر رہے ہو ﴿155﴾ یا تمہارے پاس اس کی کوئی واضح دلیل ہے ﴿156﴾ تو اپنی کتاب کو لے آؤ اگر تم اپنے دعویٰ میں سچے ہو ﴿157﴾ اور انہوں نے خدا اور جّنات کے درمیان بھی رشتہ قرار دے دیا حالانکہ جّنات کو معلوم ہے کہ انہیں بھی خدا کی بارگاہ میں حاضر کیا جائے گا ﴿158﴾ خدا ان سب کے بیانات سے بلند و برتر اور پاک و پاکیزہ ہے ﴿159﴾ علاوہ خدا کے نیک اور مخلص بندوں کے ﴿160﴾ پھر تم اور جس کی تم پرستش کر رہے ہو ﴿161﴾ سب مل کر بھی اس کے خلاف کسی کو بہکا نہیں سکتے ہو ﴿162﴾ علاوہ اس کے جس کو جہنّم میں جانا ہی ہے ﴿163﴾ اور ہم میں سے ہر ایک کے لئے ایک مقام معّین ہے ﴿164﴾ اور ہم اس کی بارگاہ میں صف بستہ کھڑے ہونے والے ہیں ﴿165﴾ اور ہم اس کی تسبیح کرنے والے ہیں ﴿166﴾ اگرچہ یہ لوگ یہی کہا کرتے تھے ﴿167﴾ کہ اگر ہمارے پاس بھی پہلے والوں کا تذکرہ ہوتا ﴿168﴾ تو ہم بھی اللہ کے نیک اور مخلص بندے ہوتے ﴿169﴾ تو پھر ان لوگوں نے کفر اختیار کر لیا تو عنقریب انہیں اس کا انجام معلوم ہو جائے گا ﴿170﴾ اور ہمارے پیغامبر بندوں سے ہماری بات پہلے ہی طے ہو چکی ہے ﴿171﴾ کہ ان کی مدد بہرحال کی جائے گی ﴿172﴾ اور ہمارا لشکر بہرحال غالب آنے والا ہے ﴿173﴾ لہذا آپ تھوڑے دنوں کے لئے ان سے منہ پھیر لیں ﴿174﴾ اور ان کو دیکھتے رہیں عنقریب یہ خود اپنے انجام کو دیکھ لیں گے ﴿175﴾ کیا یہ ہمارے عذاب کے بارے میں جلدی کر رہے ہیں ﴿176﴾ تو جب وہ عذاب ان کے آنگن میں نازل ہو جائے گا تو وہ ڈرائی جانے والی قوم کی بدترین صبح ہو گی ﴿177﴾ اور آپ تھوڑے دنوں ان سے منہ پھیرتیں ﴿178﴾ اور دیکھتے رہیں عنقریب یہ خود دیکھ لیں گے ﴿179﴾ آپ کا پروردگار جو مالک عزت بھی ہے ان کے بیانات سے پاک و پاکیزہ ہے ﴿180﴾ اور ہمارا سلام تمام مرسلین پر ہے ﴿181﴾ اور ساری تعریف اس اللہ کے لئے ہے جو عالمین کا پروردگار ہے ﴿182﴾