بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

فَالْفَارِقَاتِ فَرْقًا ﴿4﴾ فَالْمُلْقِيَاتِ ذِكْرًا ﴿5﴾ عُذْرًا أَوْ نُذْرًا ﴿6﴾ إِنَّمَا تُوعَدُونَ لَوَاقِعٌ ﴿7﴾ فَإِذَا النُّجُومُ طُمِسَتْ ﴿8﴾ وَإِذَا السَّمَاءُ فُرِجَتْ ﴿9﴾ وَإِذَا الْجِبَالُ نُسِفَتْ ﴿10﴾ وَإِذَا الرُّسُلُ أُقِّتَتْ ﴿11﴾ لِأَيِّ يَوْمٍ أُجِّلَتْ ﴿12﴾ لِيَوْمِ الْفَصْلِ ﴿13﴾ وَمَا أَدْرَاكَ مَا يَوْمُ الْفَصْلِ ﴿14﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿15﴾ أَلَمْ نُهْلِكِ الْأَوَّلِينَ ﴿16﴾ فَالْعَاصِفَاتِ عَصْفًا ﴿2﴾ وَالنَّاشِرَاتِ نَشْرًا ﴿3﴾ وَالْمُرْسَلَاتِ عُرْفًا ﴿1﴾ ثُمَّ نُتْبِعُهُمُ الْآخِرِينَ ﴿17﴾ كَذَٰلِكَ نَفْعَلُ بِالْمُجْرِمِينَ ﴿18﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿19﴾ أَلَمْ نَخْلُقْكُمْ مِنْ مَاءٍ مَهِينٍ ﴿20﴾ فَجَعَلْنَاهُ فِي قَرَارٍ مَكِينٍ ﴿21﴾ إِلَىٰ قَدَرٍ مَعْلُومٍ ﴿22﴾ فَقَدَرْنَا فَنِعْمَ الْقَادِرُونَ ﴿23﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿24﴾ أَلَمْ نَجْعَلِ الْأَرْضَ كِفَاتًا ﴿25﴾ أَحْيَاءً وَأَمْوَاتًا ﴿26﴾ وَجَعَلْنَا فِيهَا رَوَاسِيَ شَامِخَاتٍ وَأَسْقَيْنَاكُمْ مَاءً فُرَاتًا ﴿27﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿28﴾ انْطَلِقُوا إِلَىٰ مَا كُنْتُمْ بِهِ تُكَذِّبُونَ ﴿29﴾ انْطَلِقُوا إِلَىٰ ظِلٍّ ذِي ثَلَاثِ شُعَبٍ ﴿30﴾ لَا ظَلِيلٍ وَلَا يُغْنِي مِنَ اللَّهَبِ ﴿31﴾ إِنَّهَا تَرْمِي بِشَرَرٍ كَالْقَصْرِ ﴿32﴾ كَأَنَّهُ جِمَالَتٌ صُفْرٌ ﴿33﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿34﴾ هَٰذَا يَوْمُ لَا يَنْطِقُونَ ﴿35﴾ وَلَا يُؤْذَنُ لَهُمْ فَيَعْتَذِرُونَ ﴿36﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿37﴾ هَٰذَا يَوْمُ الْفَصْلِ ۖ جَمَعْنَاكُمْ وَالْأَوَّلِينَ ﴿38﴾ فَإِنْ كَانَ لَكُمْ كَيْدٌ فَكِيدُونِ ﴿39﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿40﴾ إِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي ظِلَالٍ وَعُيُونٍ ﴿41﴾ وَفَوَاكِهَ مِمَّا يَشْتَهُونَ ﴿42﴾ كُلُوا وَاشْرَبُوا هَنِيئًا بِمَا كُنْتُمْ تَعْمَلُونَ ﴿43﴾ إِنَّا كَذَٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِينَ ﴿44﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿45﴾ كُلُوا وَتَمَتَّعُوا قَلِيلًا إِنَّكُمْ مُجْرِمُونَ ﴿46﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿47﴾ وَإِذَا قِيلَ لَهُمُ ارْكَعُوا لَا يَرْكَعُونَ ﴿48﴾ وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِلْمُكَذِّبِينَ ﴿49﴾ فَبِأَيِّ حَدِيثٍ بَعْدَهُ يُؤْمِنُونَ ﴿50﴾

عظیم اور دائمی رحمتوں والے خدا کے نام سے

پھر انہیں آپس میں جدا کرنے والی ہیں ﴿4﴾ پھر ذ کر کو نازل کرنے والی ہیں ﴿5﴾ تاکہ عذر تمام ہو یا خوف پیدا کرایا جائے ﴿6﴾ جس چیز کا تم سے وعدہ کیا گیا ہے وہ بہرحال واقع ہونے والی ہے ﴿7﴾ پھر جب ستاروں کی چمک ختم ہو جائے ﴿8﴾ اور آسمانوں میں شگاف پیدا ہو جائے ﴿9﴾ اور جب پہاڑ اُڑنے لگیں ﴿10﴾ اور جب سارے پیغمبر علیہ السّلام ایک وقت میں جمع کر لئے جائیں ﴿11﴾ بھلا کس دن کے لئے ان باتوں میں تاخیر کی گئی ہے ﴿12﴾ فیصلہ کے دن کے لئے ﴿13﴾ اور آپ کیا جانیں کہ فیصلہ کا دن کیا ہے ﴿14﴾ اس دن جھٹلانے والوں کے لئے جہنمّ ہے ﴿15﴾ کیا ہم نے ان کے پہلے والوں کو ہلاک نہیں کر دیا ہے ﴿16﴾ پھر تیز رفتاری سے چلنے والی ہیں ﴿2﴾ اور قسم ہے ان کی جو اشیاء کو منتشر کرنے والی ہیں ﴿3﴾ ان کی قسم جنہیں تسلسل کے ساتھ بھیجا گیا ہے ﴿1﴾ پھر دوسرے لوگوں کو بھی ان ہی کے پیچھے لگا دیں گے ﴿17﴾ ہم مجرموں کے ساتھ اسی طرح کا برتاؤ کرتے ہیں ﴿18﴾ اور آج کے دن جھٹلانے والوں کے لئے بربادی ہی بربادی ہے ﴿19﴾ کیا ہم نے تم کو ایک حقیر پانی سے نہیں پیدا کیا ہے ﴿20﴾ پھر اسے ایک محفوظ مقام پر قرار دیا ہے ﴿21﴾ ایک معین مقدار تک ﴿22﴾ پھر ہم نے اس کی مقدار معین کی ہے تو ہم بہترین مقدار مقرر کرنے والے ہیں ﴿23﴾ آج کے دن جھٹلانے والوں کے لئے بربادی ہے ﴿24﴾ کیا ہم نے زمین کو ایک جمع کرنے والا ظرف نہیں بنایا ہے ﴿25﴾ جس میں زندہ مردہ سب کو جمع کریں گے ﴿26﴾ اور اس میں اونچے اونچے پہاڑ قرار دئے ہیں اور تمہیں شیریں پانی سے سیراب کیا ہے ﴿27﴾ آج جھٹلانے والوں کے لئے بربادی اور تباہی ہے ﴿28﴾ جاؤ اس طرف جس کی تکذیب کیا کرتے تھے ﴿29﴾ جاؤ اس دھوئیں کے سایہ کی طرف جس کے تین گوشے ہیں ﴿30﴾ نہ ٹھنڈک ہے اور نہ جہنمّ کی لپٹ سے بچانے والا سہارا ﴿31﴾ وہ ایسے انگارے پھینک رہا ہے جیسے کوئی محل ﴿32﴾ جیسے زرد رنگ کے اونٹ ﴿33﴾ آج کے دن جھٹلانے والوں کے لئے بربادی اور جہنمّ ہے ﴿34﴾ آج کے دن یہ لوگ بات بھی نہ کر سکیں گے ﴿35﴾ اور نہ انہیں اس بات کی اجازت ہو گی کہ عذر پیش کر سکیں ﴿36﴾ آج کے دن جھٹلانے والوں کے لئے جہنمّ ہے ﴿37﴾ یہ فیصلہ کا دن ہے جس میں ہم نے تم کو اور تمام پہلے والوں کو اکٹھا کیا ہے ﴿38﴾ اب اگر تمہارے پاس کوئی چال ہو تو ہم سے استعمال کرو ﴿39﴾ آج تکذیب کرنے والوں کے لئے جہنمّ ہے ﴿40﴾ بیشک متقین گھنی چھاؤں اور چشموں کے درمیان ہوں گے ﴿41﴾ اور ان کی خواہش کے مطابق میوے ہوں گے ﴿42﴾ اب اطمینان سے کھاؤ پیو ان اعمال کی بنا پر جو تم نے انجام دیئے ہیں ﴿43﴾ ہم اسی طرح نیک عمل کرنے والوں کو بدلہ دیتے ہیں ﴿44﴾ آج جھٹلانے والوں کے لئے جہنم ہے ﴿45﴾ تم لوگ تھوڑے دنوں کھاؤ اور آرام کر لو کہ تم مجرم ہو ﴿46﴾ آج کے دن تکذیب کرنے والوں کے لئے ویل ہے ﴿47﴾ اور جب ان سے کہا جاتا ہے کہ رکوع کرو تو نہیں کرتے ہیں ﴿48﴾ تو آج کے دن جھٹلانے والوں کے لئے جہنم ہے ﴿49﴾ آخر یہ لوگ اس کے بعد کس بات پر ایمان لے آئیں گے ﴿50﴾