بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

فَلْيَنْظُرِ الْإِنْسَانُ مِمَّ خُلِقَ ﴿5﴾ خُلِقَ مِنْ مَاءٍ دَافِقٍ ﴿6﴾ يَخْرُجُ مِنْ بَيْنِ الصُّلْبِ وَالتَّرَائِبِ ﴿7﴾ إِنَّهُ عَلَىٰ رَجْعِهِ لَقَادِرٌ ﴿8﴾ يَوْمَ تُبْلَى السَّرَائِرُ ﴿9﴾ فَمَا لَهُ مِنْ قُوَّةٍ وَلَا نَاصِرٍ ﴿10﴾ وَالسَّمَاءِ ذَاتِ الرَّجْعِ ﴿11﴾ وَالْأَرْضِ ذَاتِ الصَّدْعِ ﴿12﴾ إِنَّهُ لَقَوْلٌ فَصْلٌ ﴿13﴾ وَمَا هُوَ بِالْهَزْلِ ﴿14﴾ إِنَّهُمْ يَكِيدُونَ كَيْدًا ﴿15﴾ وَأَكِيدُ كَيْدًا ﴿16﴾ فَمَهِّلِ الْكَافِرِينَ أَمْهِلْهُمْ رُوَيْدًا ﴿17﴾ وَمَا أَدْرَاكَ مَا الطَّارِقُ ﴿2﴾ النَّجْمُ الثَّاقِبُ ﴿3﴾ إِنْ كُلُّ نَفْسٍ لَمَّا عَلَيْهَا حَافِظٌ ﴿4﴾ وَالسَّمَاءِ وَالطَّارِقِ ﴿1﴾

عظیم اور دائمی رحمتوں والے خدا کے نام سے

پھر انسان دیکھے کہ اسے کس چیز سے پیدا کیا گیا ہے ﴿5﴾ وہ ایک اُچھلتے ہوئے پانی سے پیدا کیا گیا ہے ﴿6﴾ جو پیٹھ اور سینہ کی ہڈیوں کے درمیان سے نکلتا ہے ﴿7﴾ یقیناً وہ خدا انسان کے دوبارہ پیدا کرنے پر بھی قادر ہے ﴿8﴾ جس دن رازوں کو آزمایا جائے گا ﴿9﴾ تو پھر نہ کسی کے پاس قوت ہو گی اور نہ مددگار ﴿10﴾ قسم ہے چکر کھانے والے آسمان کی ﴿11﴾ اور شگافتہ ہونے والی زمین کی ﴿12﴾ بے شک یہ قول فیصل ہے ﴿13﴾ اور مذاق نہیں ہے ﴿14﴾ یہ لوگ اپنا مکر کر رہے ہیں ﴿15﴾ اور ہم اپنی تدبیر کر رہے ہیں ﴿16﴾ تو کافروں کو چھوڑ دو اور انہیں تھوڑی سی مہلت دے دو ﴿17﴾ اور تم کیا جانو کہ طارق کیا ہے ﴿2﴾ یہ ایک چمکتا ہوا ستارہ ہے ﴿3﴾ کوئی نفس ایسا نہیں ہے جس کے اوپر نگراں نہ معین کیا گیا ہو ﴿4﴾ آسمان اور رات کو آنے والے کی قسم ﴿1﴾